فوجی عدالتوں میں سویلین کے ٹرائل سے متعلق کیس کی سماعت آج ہو گی

اسلام آباد: فوجی عدالتوں میں سویلین کے ٹرائل سے متعلق کیس کی سماعت آج سپریم کورٹ میں ہوگی۔چیف جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں 6 رکنی لارجر بنچ سماعت کرے گا، لارجر بنچ میں جسٹس اعجاز الاحسن، جسٹس منیب اختر، جسٹس یحییٰ آفریدی، جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی اور جسٹس عائشہ ملک شامل ہیں۔
وفاق نے سپریم کورٹ میں جواب جمع کروا دیا ہے جس میں عدالت عظمیٰ سے تمام درخواستیں خارج اور معاملہ فل کورٹ کے سامنے مقرر کرنے کی استدعا کی گئی ہے۔وفاق کی جانب سے سپریم کورٹ سے تمام درخواستیں خارج کرنے کی استدعا کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ان درخواستوں کے اندر انتہائی اہم حساس معاملے کو سامنے لایا گیا ہے۔وفاقی حکومت کا موقف ہے کہ سپریم کورٹ براہ راست اس کیس کو نہ سنے۔
حکومت کی جانب سے موقف اپنایا گیا ہے کہ فوجی و دفاع تنصیبات پرحملہ نیشنل سکیورٹی کا معاملہ ہے اس لیے 9 مئی کے واقعات میں ملوث افراد کا خصوصی عدالتوں میں ٹرائل مناسب ہے۔یاد رہے کہ سیکرٹ ایکٹ کے تحت تمام اقدامات قانون کے مطابق درست ہیں، اس حوالے سے صدر سپریم کورٹ بار عابد زبیری کی درخواست قابل سماعت قرار دی گئی ہے۔گزشتہ سماعت میں اٹارنی جنرل نے ملٹری کسٹڈی میں 102 افراد کے ناموں سمیت تفصیلات عدالت میں جمع کروائی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں