9 مئی واقعات: ملوث عناصر کو ریلیف دینے کیلئے چہ مگوئیاں ہو رہی ہیں: عطاء تارڑ

اسلام آباد: وزیراعظم کے معاون خصوصی عطاء تارڑ نے کہا ہے کہ ملٹری کورٹس سے متعلق رات کو درخواست آئی صبح کیس لگ گیا، کیا ملک میں دیگر کیسز ختم ہوگئے کہ یہ کیس سنا گیا، اس کیس میں کیا جلدبازی ہے کہ اسے روز سنا جارہا ہے۔
عطاء تارڑ نے سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آپ پارلیمان کو کہہ دیں کہ آفیشل سیکرٹ ایکٹ قانون ختم کردیں، آپ کہہ دیں کہ آرمی ایکٹ ہی ختم کردیں۔انہوں نے کہا کہ یہ تاثر دینے کی کوشش کی جارہی ہے کہ 9 مئی کے واقعات معمولی واقعات تھے، ملٹری کورٹ کے فیصلے کےخلاف تین جگہ اپیل کی جاسکتی ہے۔وزیراعظم کے معاون خصوصی نے کہا کہ ملٹری کورٹ میں ملزم وکیل کرسکتا ہے ان کو آخر خوف کس بات کا ہے، 9 مئی کے واقعات میں ملوث عناصر کو ریلیف دینے کیلئے چہ مگوئیاں ہورہی ہیں، اتنی عجلت والی کیا بات تھی کہ کیس کی سماعت روز چل رہی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں